حسبی ربی جل اللہ مافی قلبی غیر اللہ


حسبی ربی جل اللہ
مافی قلبی غیر اللہ
نور محمد صل اللہ
 لا الٰہ الا اللہ

تیرے صدقے میں آقا ﷺ 
سارے جہاں کو دین ملا
بے دینوں نے کلمہ پڑھا
 لا الٰہ الا اللہ

سمت نبیﷺ بوجہل گیا
آقا ﷺ سے اس نے یہ کہا
گر ہو نبی تو بتلاؤ ذرا
میری مٹھی میں ھے کیا
آقا ﷺ کا فرمان ھوا 
اور فضل رحمان ھوا
مٹھی سے پتھر بولا
 لا الٰہ الا اللہ

وہ جو بلال حبشی ھے 
سرور دیں کا پیارا ھے
دنیا کے ھر عاشق کی 
آنکھوں کا وہ تارا ھے
ظلم ھوئے کتنے اس پر
سینے پر رکھا پتھر
لب پر پھر بھی جاری تھا
 لا الٰہ الا اللہ

اپنی بہن سے بولے عمر
یہ تو بتا کیا کرتی تھی
میرے آنے سے پہلے 
کیا چپکے چپکے پڑھتی تھی
بہن نے جب قرآن پڑھا
سن کے کلام پاک خدا
دل یہ عمر کا بول اٹھا
 لا الٰہ الا اللہ

دنیا کے انسان سبھی
شرک و بدعت کرتے تھے
رب کے تھے بندے پھر بھی
بت کی عبادت کرتے تھے
بت خانے یوں تھرائے
میرے نبیﷺ جب آئے
کہنے لگی مخلوق خدا
 لا الٰہ الا اللہ

Post a Comment

0 Comments