نہ کلیم کا تصور نہ خیال طور سینا میری آرزو محمدﷺ مری جستجو مدینہ


نعتِ رسولِ مقبول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

نہ کلیم کا تصور نہ خیال طور سینا
میری آرزو محمدﷺ مری جستجو مدینہ

میں گدائے مصطفٰی ہوں مری عظمتیں نہ پوچھو
مجھے دیکھ کر جہنم کو بھی آ گیا پسینہ

مجھے دشمنوں نہ چھیڑو مرا ہے جہاں میں کوئی
میں ابھی پکار لوں گا نہیں دور ہے مدینہ

میں مریضِ مصطفٰی ہوں مجھے چھیڑو نہ طبیبو
مری زندگی جو چاہو، مجھے لے چلو مدینہ

مرے ڈوبنے میں باقی نہ کوئی کسر رہی تھی
کہا المدد محمد ﷺ تو اُبھر گیا سفینہ

سِوا اس کے میرے دل میں کوئی آرزو نہیں ہے
مجھے موت بھی جو آئے تو ہو سامنے مدینہ

کھبی اے شکیل دل سے نہ مِٹے خیالِ احمد
اِسی آرزو میں مرنا اِسی آرزو میں جینا

====================

Naat-e-RASOOL-e-MAQBOOL (SAWW)

Na Kaleem ka tasawur na Khayal-e-Toor-e-Sina
Meri arzoo MUHAMMAD(SAWW), Meri arzoo Madina

Main gadae-e-MUSTAFA hoon meri azmatei'N na pocho
Mujhe daikh ker jahanum ko bhi aa giya paseena

Mujhe dushmanoo na chairro mera hai JahaN mein Koi
Main abhi pukaar lou'N ga, Nahi door hai Madina

Main mareez-e-MUSTAFA hoon mujhe chairro na tabeebo
Meri zindagi jo chaho Mujhe ley chalo Madina

Meray doobnay mein baqi na koi kasr rehi thi
Kaha Al'madad MUHAMMAD(SAWW) to ubharr giya safeena

Siwa iss key meray dil mein koi arzoo nahi hai
Mujhe maut bhi jo aaye to ho samnay Madina

Kabhi aye Shakeel dil sey nah mittay Khayal-e-AHMED
Issi arzoo mein marna issi arzoo meiN jeena !!

Post a Comment

0 Comments