جنت کی خوشبو سے محروم کون ؟


 “ السّلام علیکم و رحمة الله و برکاتہ “

:فضیلت درود پاک


اِنَّ اللّٰهَ وَ مَلٰٓىٕكَتَهٗ یُصَلُّوْنَ عَلَى النَّبِیِّؕ-یٰۤاَیُّهَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا صَلُّوْا عَلَیْهِ وَ سَلِّمُوْا تَسْلِیْمًا

بیشک اللہ اور اس کے فرشتے نبی پر درود بھیجتے ہیں ۔ اے ایمان والو!ان پر درود اور خوب سلام بھیجو۔


سورہ احزاب۔ آیت نمبر 56۔ ترجمہ کنزالعرفان 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
درود ابراہیمی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اس لیے آپ بھی ایک بار درود پاک پڑھ لیجیے

اللَّهُمَّ صَلِّ عَلَى مُحَمَّدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا صَلَّيْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ

اللَّهُمَّ بَارِكْ عَلَى مُحَمَّدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا بَارَكْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ، وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ


۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جمعہ اسپیشل
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


جنت کی خوشبو سے محروم کون ؟



انسان خطا کا پتلا ہے وہ گناہ بھی کرتا ہے اور نیکی بھی، لیکن اللہ رب العزت کی رحمت ہمیشہ اس کے غضب پر حاوی رہتی ہے ۔ او ر وہ اپنے بندوں کی بخشش کے بہا نے تلاش کرتا ہے ۔ اس لئے کہا جاتا ہے کہ چھوٹی سی نیکی کو بھی حقیر نہیں سمجھنا چاہئیے نہ جانے کو ن سی نیکی بخشش کا سبب بن جائے ،اور اس کا بدلہ ہمیں جنت کی صورت میں دیاجائے، کیوں کہ گناہ کی صورت میں انسان کو جہنم میں دھکیلا جائے گا جو کہ بدترین جگہ ہے جبکہ نیکوکاروں کو جنت میں اعلیٰ مقام سے نوازا جائے گا ۔ جو کہ اس کائنات کی سب سے بہترین جگہ ہے۔ جنت کی خوشبو کئی سو سال کی مسافت سے بھی محسوس کی جاسکتی ہے لیکن کچھ گناہ ایسے ہیں جن کو کرنے والا اس کی خوشبو سے بھی محروم رہے گا ان میں ایک وہ شخص جس نے قطع رحمی کی یعنی قریبی رشتے داروں سے تعلق نہیں رکھا، جیسا کہ آج کل ایک ہی گھر میں دو بھائیوں یا بہنوں ، اولاد کا والدین کے ساتھ یا دوسرے قریبی رشتہ داروں سے رشتہ یا تعلق نہ رکھنا، اور دوسرا وہ شخص جو والدین کا نافرمان ہو ،جنت کی خوشبو سے محروم رہے گا۔اگر ہم ان گناہ میں مبتلا ہیں تو چاہئے کہ آج ابھی تو بہ کرکے ان کو منالیں تاکہ بروز قیامت جنت کی خوشبو محسوس کرتے ہوئے اس میں داخل ہوں۔

Post a Comment

0 Comments