باپ اور بیٹے کے معصومانہ لطیفے


باپ اور بیٹے کے معصومانہ لطیفے


پڑھائی
باپ بیٹے کو فیس دیتے ہوئے ۔ ”بیٹا! زیادہ پڑھا کرو کیونکہ تمہاری تعلیم پر ہمارا بہت سا پیسہ خرچ ہو رہا ہے۔“ بیٹا:”ابو جان! اسی لیے تو زیادہ نہیں پڑھتا۔

فوری جھوٹ

ایک صاحب کا بچہ اول درجے کا جھوٹا تھا۔ صاحب یہ بات جانتے تھے، ایک دن اُنہوں نے اُس سے کہا: دیکھو بیٹا: تم اگر ایک لمحہ بھی سوچے بغیر کوئی جھوٹ بولو تو میں تمہیں بیس روپے دوں گا۔
لڑکے نے فوراً کہا: صبح تو آپ نے چالیس روبے کہا تھا۔

aik sahib ka bacha awwal darjay ka jhoota tha. sahib yeh baat jantay thay, aik din onhon naay uss se kaha : dekho beta : tum agar aik lamha bhi soochey baghair koi jhoot bolo to mein tumhe bees rupay dun ga .
larke naay foran kaha : subah to aap naay chalees rupay kaha tha .


لائق

باپ : بیٹا 5 کے بعد کیا آتا ہے ؟ 
بیٹا : 6 ، 7 . 
باپ : واہ میرا بیٹا تو بہت لائق ہے ، اور 6 ، 7 کے بعد کیا آتا ہے ؟ 
بیٹا : 8 ، 9 ، 10 . 
باپ : واہ کیا بات ہے اور اس کے بعد ؟ 
بیٹا : گولا ، بیگی ، بادشاہ ، یکہ .

Baap: Beta 5 k baad kia aata hai?
Beta: 6, 7.
Baap: Wah mera beta to buhat laaiq hai, aur 6, 7 k baad kia aata hai?
Beta: 8, 9, 10.
Baap: Wah kia baat hai aur us k baad?
Beta: Gola, Begi, Baadshah, Yakkah.


موبائل

باپ : اِس موبائل کی جان چھوڑ دو اِس سے تمہیں روٹی نہیں ملنے والی . 
بیٹا : کوئی بات نہیں ابو جان روٹی بنانے والی تو مل جائے گی .


Baap: Is mobile ki jaan chor do is se tumhe rotti nahi milne wali.
Beta: koi baat nahi abbu jaan rotti banane wali to mil jaye gi.

خواب

پاپا میں نے خواب میں دیکھا کے میرا ایک پیر زمین پر اور دوسرا آسمان پر ہے . . . 
اِس طرح کے خواب مت دیکھا کر بیٹا ، کسی دن اپنی شلوار پھاڑ لے گا !

Papa mai ne khuwab mai daikha k mera aik pair zameen par aur dosra aasman par hai...
Is tarah k khuwab mat dekha kar beta, Kisi din apni shalwar phaar le ga!


بچہ : ابو آپ کس سے پیار کرتے ہیں ؟
ابو : تمہاری امی سے
بچہ : ابو بہت چالاک ہو گھر میں ہی چکر چلایا ہوا ہے .
***
موٹرسائیکل ضرور لے کر دوں گا
باپ : اس بار امتحان كے بعد تمہیں موٹر سائیکل ضرور لے کردوگا چاہے تم پاس ہو یا فیل 
بیٹا : سچ ؟ 
باپ : ہاں بیٹا پاس ہوئے تو ہونڈا اور فیل ہوئے تو یاماہا
ہونڈا یونیورسٹی جانے كے لیے اور یاماہا دودھ بیچنے كے لیے
***
رعب
ڈیڈی ! آج ہمارے کالج میں فنکشن ہو رہا ہے ، مجھے کار کی چابی چاہیے . بیٹے نے فرمائش کی . 
ڈیڈی نے پوچھا . " بیٹا . . . تمہاری موٹر سائیکل کو کیا ہوا ؟ " 
بیٹا بولا . " کچھ نہیں ڈیڈی ! دراصل جب میں 8 لاکھ کی گاڑی میں جاؤں گا تو بہت رُعْب پڑے گا . " 
ڈیڈی نے جیب سے 20 روپے نکالے اور بیٹے کو دیتے ہوئے کہا . " یہ لو پیسے جب تم 60 لاکھ کی بس میں جاؤ گے تو بہت زیادہ رُعْب پڑے گا . 
***
دو ٹانگیں
بچہ : ابو مجھے موٹر سائیکل لے کر دیں . 
ابو : بیٹا الله نے یہ دو ٹانگیں کس لیے دی ہیں ؟ 
بچہ : ایک کِک مارنے کے لیے اور ایک گیئر لگانے کے لیے !
***
جانور
باپ اپنے بیٹے سے : بیٹا تو شیر کا بچہ ہے . . . 
بیٹا : پاپا اسکول میں ٹیچر بھی یہی کہتی ہیں تو کسی جانور کی اولاد لگتا ہے
***
موبائل
باپ : اِس موبائل کی جان چھوڑ دو اِس سے تمہیں روٹی نہیں ملنے والی . 
بیٹا : کوئی بات نہیں ابو جان روٹی بنانے والی تو مل جائے گی .
***
باپ بیٹا دکھی ہونے کی ضرورت نہیں تمہاری قسمت میں ہی فیل ہونا لکھا تھا۔
ہاں پاپا آپ سچ کہہ رہے ہیں ۔ اچھا ہوا میں نے پڑھا نہیں ورنہ میری ساری مھنت ضائع چلی جاتی۔
****
باپ بیٹا اس بار امتحان میں نوے فیصد نمبر لینا۔
نہیں پاپا میں سو فیصد نمبر لوں گا ۔ 
باپ ۔ کیوں مذاق کر رہے ہو بیٹا
پپو ، تو شروع کس نے کیا تھا ؟
***
بیٹا: ابو! آپ کے بالکل سفید کیوں ہو رہے ہیں؟
باپ: بیٹا جب بھی تم ایک شرارت کرتے ہو، میرا ایک
بال سفید ہو جاتا ہے۔.
بیٹا: اب میں سمجھ گیا کہ دادا جان کے تمام بال کیوں
سفید ہیں۔

Post a Comment

0 Comments